April 23, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/pldtvibe.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

یوکرین کی دفاعی انٹیلی جنس نے پیر کو کہا کہ اس کے سائبر ماہرین نے روسی وزارتِ دفاع کو ہیک کر لیا اور اس کے سرورز تک رسائی کے ذریعے خفیہ دستاویزات اور معلومات حاصل کر لیں جس سے وزارت کا ڈھانچہ ظاہر ہو گیا اور اہم رہنماؤں کے بارے میں معلومات کا انکشاف ہوا۔

یوکرینی وزارتِ دفاع کے مین ڈائریکٹوریٹ آف انٹیلی جنس (جی یو آر) نے ٹیلی گرام پر کہا: “یوکرین کی انٹیلی جنس سروس کے پاس اب معلومات کے تحفظ اور خفیہ کاری (اینکرپشن) کے لیے سافٹ ویئر موجود ہے جو پہلے روسی وزارتِ دفاع کے استعمال میں تھا اور ساتھ ہی روسی وزارت جنگ سے تعلق رکھنے والے درجہ بند خفیہ سرکاری دستاویزات کا ایک ذخیرہ۔”

ان دستاویزات میں “روسی وزارتِ دفاع کے 2,000 سے زیادہ ساختی یونٹس میں گردش کرنے والے آرڈرز، ہدایات، رپورٹس اور دیگر دستاویزات شامل ہیں۔”

یوکرینی جی یو آر نے کہا کہ اس کی حاصل کردہ خفیہ معلومات نے روسی وزارتِ دفاع اور اس کی شاخوں کے مکمل ڈھانچے سے پردہ کشائی کو کائیو کے لیے ممکن بنایا۔

اس نے مزید کہا: “حاصل کردہ ڈیٹا کے تجزیے سے جنرلز اور روسی وزارتِ دفاع کے ڈھانچہ جاتی یونٹس کے دیگر اعلیٰ عہدے داروں کے ساتھ ساتھ نائبین، معاونین اور ماہرین کی شناخت کرنے میں بھی مدد ملی ہے – وہ تمام لوگ جنہوں نے الیکٹرانک دستاویز گردش کرنے والا سافٹ ویئر استعمال کیا جو ‘بیوروکریٹ’ کہلاتا ہے۔”

یوکرین کی انٹیلی جنس سروس نے روسی نائب وزیرِ دفاع تیمور وادیمووچ ایوانوف کا خصوصیت سے ذکر کیا اور کہا کہ اس نے ان سے سرکاری دستاویزات حاصل کیں اور مزید کہا کہ انہوں نے “سائبر حملے کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔”

روسی وزارتِ دفاع نے یوکرین کے دعوے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

تقریباً دو سال قبل روس کے یوکرین پر حملے کے بعد سے فریقین کو بڑے سائبر حملوں کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ ماسکو عام طور پر کائیو کے خلاف سائبر حملوں کے پیچھے ہونے کی تردید کرتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *